نظر کو نظر نے نظر بھر کے دیکھانظر کو نظر کی نظر لگ گئی ہے،جگر پر جگر نے جگر چوٹ ماریجگر کا جگر نے جگر چیر ڈالا،بشر نے بشر کو بشر ہی نہ سمجھابشر نے بشر میں بشر مار ڈالا،خوشی کب خوشی تھی،خوشی تھی دکھاواخوشی کی خوشی بھی خوشی اب نہیں ہے،سدا سے صدا پر صدا دے رہا ہوںصدا یہ سدا سے صدا بن سکی نہ،قمر یہ کمر اُس قمر سے ہے برترقمر اِس کمر پر قمر وہ فدا ہے،مریدِ ساغر

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s